تازہ ترین
ملک کی نظریاتی و جغرافیائی سرحدوں کے تحفظ کیلئے وسیع تر اتحاد قائم کریں گے، ملی مسلم لیگ اقلیتوں کے حقوق کا تحفظ کرے گی۔ سیف اللہ خالد

ملک کی نظریاتی و جغرافیائی سرحدوں کے تحفظ کیلئے وسیع تر اتحاد قائم کریں گے، ملی مسلم لیگ اقلیتوں کے حقوق کا تحفظ کرے گی۔ سیف اللہ خالد

لاہور(پاکستان اپڈیٹس)ملی مسلم لیگ پاکستان کے صدر سیف اللہ خالد نے کہا ہے کہ آئین کے آرٹیکل 62، 63کے خاتمہ کی کوششیں درست نہیں۔ ملک کی نظریاتی و جغرافیائی سرحدوں کے تحفظ کیلئے وسیع تر اتحاد قائم کریں گے۔ ملی مسلم لیگ اقلیتوں کے حقوق کا تحفظ کرے گی۔ خواتین کیلئے باوقار زندگی گزارنے کا مکمل لائحہ عمل پیش کریں گے۔نوجوان نسل کی جانب سب سے زیادہ توجہ دی جائے گی۔ نظریہ پاکستان کو نصاب تعلیم و نظام تعلیم میں شامل کیا جائے گا۔ہم ملک میں امن ، عدل و انصاف اور رواداری چاہتے ہیں۔جامع مسجد القادسیہ میں خطبہ جمعہ کے دوران انہوںنے کہاکہ جس پاکستان کا تصور علامہ اقبال نے پیش کیاتھا اور قائداعظم نے تحریک چلا کر پاکستان بنایا آج ملی مسلم لیگ اسی تحریک کو آگے بڑھائے گی۔جو جذبے پاکستان بنانے والوں کے تھے انہی جذبوں سے ملک کا دفاع کر یں گے۔سیاست میں محمد رسول اللہ ﷺ ہمارے لئے بہترین نمونہ ہیں۔ہم نے خدمت کا کام بھی دین اورایمان کے جذبوں سے کیا ‘سیاست بھی اسی طرح کریں گے۔انہوںنے کہاکہ سیاست کے میدان میں جو کمزوریاں موجود ہیں ہم انکی اصلاح کریں گے۔ملی مسلم لیگ جماعتوں کا اتحاد قائم کرے گی۔اتوار 13اگست کو مال روڈ پر یوم آزادی کے حوالہ سے بڑا جلسہ عام ہو گا جس میں ملک بھر کی سیاسی، مذہبی، سماجی و کشمیری جماعتوں کے قائدین خطاب کریں گے۔ہم امت کو جوڑیں گے اور اتحاد کی سیاست کریں گے یہی ہمارا نصب العین ہے۔انہوںنے کہاکہ نظریہ پاکستان کی بنیاد پر پہلے بھی قوم متحد ہوئی آج بھی اسی بنیاد پر اتحاد بنائیں گے۔سلالہ چیک پوسٹ پر امریکہ کی جانب سے حملہ ہواجس میں پاک فوج کے جوان شہید ہوئے، پورا ملک سوگ میں مبتلا تھا۔اس وقت دفاع پاکستان کونسل کے نام سے مذہبی و سیاسی جماعتوں کا اتحاد تشکیل دیا گیا جس کی تحریک کے نتیجے میں نیٹو سپلائی بھی بند ہوئی اور بھارت کو موسٹ فیورٹ کا درجہ بھی نہیں دیا جا سکا۔آج بھی وطن عزیز پاکستان کیخلاف درپیش سازشوں کو کامیاب نہیں ہونے دیں گے۔سیف اللہ خالد نے کہاکہ کشمیر کا مسئلہ اسی دن کھڑا ہو گیاتھا جب ہندوستان کی تقسیم کا اعلان ہوا تھا ۔انگریز نے نہرو کے ساتھ مل کرصرف کشمیر ہی نہیں بلکہ امرتسر،گورداسپور، حیدرآباد دکن،جونا گڑھ کا بھی خون کیا ۔ بانی پاکستان نے کشمیر کو پاکستان کی شہ رگ قرار دیا تھا ۔ملی مسلم لیگ اپنی اس شہ رگ کو آزاد کروائےگی۔اقوام متحدہ میں بھارت نے خود قراردادوں پر دستخط کئے،اس حوالہ سے اٹھارہ قراردادیں موجود ہیں لیکن کشمیر کے معاملے پر وہ اندھی،گونگی بہری بن چکی ہے۔ہم امریکہ،برطانیہ،اقوام متحدہ سے کہتے ہیں کہ وہ دہشت گرد بھارت کی بجائے کشمیریوں کی تحریک کا ساتھ دیں اور انہیں حق خود ارادیت دیا جائے۔ملی مسلم لیگ اعلان کرتی ہے کہ ہم کشمیریوں کی جدوجہد آزادی کو سلام پیش کرتے ہیں اور تحریک آزادی کشمیر میں ان کے ساتھ کھڑے ہیں۔انہوں نے کہاکہ73کے آئین میں واضح طور پر لکھا ہے کہ سب سے بالاتر قانون قر آن و سنت کا ہو گا‘ حقیقت یہ ہے کہ حکمرانوں نے اپنے مقاصد کیلئے دستو ر پاکستان کو استعمال کیا ۔آئین کی شق62,63لازمی ہے۔موجودہ حکمرانوں کی جانب سے اکثریت کی بنیاد پر اس کا خاتمہ کرنے کی کوششیں درست نہیں ہیں۔ ملی مسلم لیگ امت کے اتحاد کی سیاست کرے گی۔انہوںنے کہاکہ ملی مسلم لیگ اقلیتوں کے حقوق کی حفاظت کرے گی۔پاکستان لاالہ الاللہ کے نور سے منور ہو گا اور عالم اسلام کی قیادت کرے گا۔ملک سود کے قرضوں میں جکڑا ہوا ہے۔ ستر برسوں سے اغیار کی غلامی اختیار کی جا رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان ایک نظریاتی ملک ہے۔آٹھ کروڑ طلبا تعلیمی اداروں میں زیر تعلیم ہیں ہم نصاب تعلیم اور نظام تعلیم میں نظریہ پاکستان کو شامل کریں گے۔

Print Friendly

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

You may use these HTML tags and attributes: <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>